آپریشن ضربِ عضب اور پاک فوج کی کامیابیاں


Pakistan-zarb-e-azb_6-18-2014_151135_l

آپریشن ضربِ عضب اور پاک فوج کی کامیابیاں
آپریشن ضرب عضب میں پاک فوج نے بڑی قربانیاں دی ہیں اور فوج نے زبردست کامیابیاں حاصل کی ہیں اور یہ آپریشن کامیابی سے آخری مراحل میں داخل ہو گیا ہے۔ اب تک فاٹا میں کیا جانے والا سب سے بڑا آپریشن ہے۔آپریشن ضرب عضب کے دوران قربانیاں دینے والوں کو پوری قوم سلام پیش کرتی ہے اور پوری قوم کو ان پر فخر ہے۔ آپریشن ضرب عضب نے دہشت گردوں پر کاری ضرب لگائی ہے اور بقول وزیر اعظم نواز شریف   شمالی وزیرستان میں آپریشن ’’ضرب عضب‘‘ نے دہشتگردوں کی کمر توڑ دی ہے۔ علاقے میں امن سے خطے میں استحکام پیدا ہوگا۔

pakistan-nawazsharif-pm-armychief-meeranshan-meeting_10-9-2014_162071_l

وزیراعظم محمد نواز شریف نے خطاب کرتے ہوئے پاک فوج کے کردار کی تعریف کی اور کہا آپریشن ضربِ عضب کی وجہ سے دہشت گردوں کو مہلک جھٹکا لگا ہے اور پاک فوج نے اس آپریشن کے لئے زبردست قربانیاں دی ہیں، اس آپریشن کے نتیجے میں خطے میں قیامِ امن کا مقصد بھی حاصل کیا جا سکے گا۔ انہوں نے کہا پاکستان کے استحکام کے لئے آئی ڈی پیز نے بڑی قربانیاں دی ہیں اور ریاستِ پاکستان ان کے علاقے کی بہتر انداز میں تعمیر نو کر کے ان کی ضرورتوں کا خیال رکھے گی، وفاقی حکومت نے اس مقصد کے لئے اُن کی دل کھول کر مالی معاونت کی ہے۔
شمالی وزیرستان میں آپریشن ضربِ عضب شروع کیا گیا تو جلد ہی اس کے مثبت نتائج سامنے آنا شروع ہو گئے، دہشت گردوں کا نیٹ ورک تباہ کر دیا گیا، اسلحے کی فیکٹریاں اور ذخیرے بھی ختم کر دیئے گئے، اُن کا کمانڈ اینڈ کنٹرول سسٹم بھی بُری طرح متاثر ہوا، دہشت گردوں کے بہت سے لیڈر مارے گئے، جس کی وجہ سے ان کی کمر ٹوٹ گئی اور وہ اِدھر اُدھر بکھر گئے، جن کے لئے ممکن ہو سکا انہوں نے افغانستان کے علاقوں میں پناہ لے لی، یوں اب تک شمالی وزیرستان کا90فیصد علاقہ کلیئر کرا لیا گیا ہے اور اس علاقے میں دہشت گرد کوئی واردات کرنے کی پوزیشن میں نہیں رہ گئے۔دہشت گردوں کے خاتمے کے ضمن میں عسکری اور سیاسی قیادت میں مکمل اتفاق رائے ہے اور مل کر دہشت گردوں کا قلع قمع کیا جا رہا ہے۔ اس سلسلے میں اندرون اور بیرونِ ملک جو غلط فہمیاں پائی جاتی تھیں اب اُن کو رفع ہو جانا چاہئے، کیونکہ اُن کی کوئی بنیاد باقی نہیں رہ گئی، دہشت گردوں کا بلاامتیاز اور بلا تفریق خاتمہ کیا جا رہا ہے اور یہ محسوس بھی ہو رہا ہے کہ دہشت گرد اب اپنی کارروائیاں بلا روک ٹوک جاری رکھنے کی پوزیشن میں نہیں رہ گئے۔

w460

index22

چیف آف آرمی سٹاف جنرل راحیل شریف نے آپریشن ضرب عضب اور خیبرون میں پیش رفت پر اطمینان کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ ضرب عضب کو ہر قیمت پر جاری رکھا جائے گا۔

دہشت گردوں سے ملک کو پاک کرنے کیلئے حکومت، فوج اور پوری قوم ایک پلیٹ فارم پر متحد ہے اور جلد اس لعنت سے چھٹکارا پانے میں ہم کامیاب ہو جائینگے ۔آپریشن ضرب عضب نے شدت پسندوں خصوصاً تحریک طالبان پاکستان کو شدید نقصان پہنچایا ہے۔آپریشن سے قبائلی علاقوں میں شدت پسندوں کی کارروائیاں بری طرح متاثر ہوئی ہیں اور ان کی بڑی تعداد میں دھماکا خیز مواد اور آئی ای ڈی بنانے والی اشیا ضبط کر لی گئی ہیں۔ پاک فوج کے شمالی وزیرستان میں آپریشن ضرب عضب میں ایجنسی کے بیشتر حصے کو تحریک طالبان پاکستان اور دیگر دہشت گرد و عسکریت پسند گروپس سے کلئیر کردیا گیا ہے، اس کارروائی کے دوران ٹی ٹی پی مرکزی ہدف تھی جبکہ وہاں موجود دیگر گروپس القاعدہ، حقانی نیٹ ورک، ازبک اور اویغور بھی اس حملے کی زد میں آئے اور علاقہ خالی کرنے پر مجبور ہوگئے۔ وہاں موجود ‘دہشت گردی کا انفراسٹرکچر’ یعنی تربیتی کیمپس، اسلحے کے ٹھکانے، رابطے کی سہولیات سب کو تباہ کردیا گیا۔ پاکستان نےداخلی طور پر دہشت گردی کی المناک قیمت ۵۰،۰۰۰ سے زیادہ افراد کے جانی نقصان اور ۸۰ ارب  ڈالر کے اقتصادی نقصان کی صورت میں ادا کی ہے۔
پاکستان کے قبائلی علاقوں سے دہشت گردی ختم ہو گی تو ملک کے عوام سکون کا سانس لے سکیں گے۔ یہ بھی امید ہے کہ آپریشن ضرب عضب کے بعد ایک امن و آشتی و ترقی و استحکام کا ایک نیا سورج طلوع ہوگا جس کی روشنی سے وطن عزیز کا کونا کونا جگمگا اٹھے گا اور ہر خاص و عام اس سے مستفید ہو سکے گا۔

Advertisements