وادی تیراہ میں فضائی کارروائی، 8 عسکریت پسند ہلاک


وادی تیراہ میں فضائی کارروائی، 8 عسکریت پسند ہلاک

news-1422361669-6569_large
سیکورٹی فورسز کی خیبر ایجنسی کی وادی تیراہ میں فضائی کارروائی کے دوران کم از کم آٹھ عسکریت پسند ہلاک جبکہ 14 زخمی ہوگئے۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ جیٹ طیاروں نے نکئی سپاہ، تورڈارا کوکیخیل اور تراخاص کے علاقوں کو نشانہ بنایا جبکہ نکئی میں ایک اسلحہ ڈپو بھی تباہ کردیا گیا۔ذرائع نے بتایا کہ ہلاک ہونے والے عسکریت پسندوں کا تعلق کالعدم لشکر اسلام اور تحریک طالبان پاکستان اور داعش سے ہے۔حملوں میں کم از کم 14 عسکریت پسند بھی زخمی ہوئے اور ان کے ٹھکانوں کو تباہ کردیا گیا۔

hkany_afganstan-1-10

ذرائع کے مطابق آپریشن ضرب عضب میں جیٹ طیاروں نے شمالی وزیرستان میں فضائی کارروائی کی۔جیٹ طیاروں نے دتہ خیل، لٹکہ اور کذامداخیل میں شدت پسندوں کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔اکیس دہشت گرد مارے گئے جن میں ایک اہم کمانڈر بھی شامل ہے۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ کارروائی میں شدت پسندوں کے متعدد ٹھکانے تباہ ہوئے،کارروائی میں ہلاکتوں کے حوالے سے اطلاعات موصول نہیں ہوئیں۔۔ دو روز کے اندر پاک فضائیہ کی کارروائی کے دوران 43؍ دہشت گرد مارے گئے ہیں جن میں غیر ملکی دہشت گرد بھی شامل ہیں۔ پاک فضائیہ اور پاک فوج نے ضرب عضب کے حوالے سے کارروائیاں تیز کر دی ہیں۔ ادھر مردان کے علاقے کاٹلنگ اور شموزئی میں فورسز نے حساس اداروں کی خفیہ اطلاع پر سرچ آپریشن کیا جس کے نتیجے میں 3؍ دہشت گرد ہلاک ہوگئے جبکہ فائرنگ کے تبادلے میں ایک اہلکار بھی زخمی ہوگیا ۔ دہشت گردوں کے قبضے سے بھاری مقدار میں اسلحہ بھی برآمد کر لیا گیا ہے۔

w460
ملک سے دہشت گردی کا خاتمہ وقت کا تقاضا ہے اور پوری قوم دہشت گردی کا مکمل خاتمہ چاہتی ہے۔معصوم شہریوں کو خون میں نہلانے والوں کا یوم حساب آن پہنچا ہے، پوری قوم دہشت گردوں کو کچلنے کیلئے متحد اور پرعزم ہے۔دہشت گردوں کو کہیں پناہ نہیں ملے گی۔ دہشت گردوں نے پشاور کے آرمی پبلک سکول میں معصوم بچوں اور اساتذہ کا خون بہا کر قوم کو غم اورزخم دیئے ہیں ۔دہشت گردوں کو بہائے گئے ہر خون کے قطرے کا حساب دینا ہوگا۔دہشت گردی کے ناسور کو جڑ سے اکھاڑپھینکنے کا وقت آگیا ہے ۔

imagesbb
پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کے سفر میں دہشت گردی بڑی رکاوٹ ہے۔ دہشت گردی اور بدامنی کی آگ نے قومی معیشت کو اربوں روپے کا نقصان پہنچایا ہے ۔ترقی کے سفر میں بھی دہشت گردی بڑی رکاوٹ ہے ۔ملک سے دہشت گردی کے عفریت کا خاتمہ کرکے بانیان پاکستان کے تصورات کے مطابق پاکستان کو ایک خوشحال، پرامن اورفلاحی ریاست بنایا جائے گا۔ قومی قیادت کا عزم اوراتحاد دہشت گردوں کیلئے عبرتناک انجام کا پیغام ہے ۔ ملک سے دہشت گردی ،انتہاء پسندی اورفرقہ واریت کے خاتمے کیلئے اجتماعی اقدامات کیے جارہے ہیں اور معصوم زندگیوں سے کھیلنے والوں کے خلاف جنگ میں جیت انشاء اللہ 18کروڑ عوام کی ہی ہوگی۔

isis-pak_1-27-2015_173195_l
بڑھتی ہوئی عسکریت پسندی اور تشدد آمیز مذہبی انتہا پسندی نے اس ملک کے وجود کو ہی خطرے میں ڈال دیا ہے ۔ یہ وہی عسکریت پسند ہیں جنہوں نے ریاست اور اس کے عوام کے خلاف اعلان جنگ کر رکھاہے ۔اب ہمارے سامنے ایک ہی راستہ ہے کہ یا تو ہم ان مسلح حملہ آوروں کے خلاف لڑیں یا پھر ان کے آگے ہتھیار ڈال دیں جو پاکستان کو دوبارہ عہدِ تاریک میں لے جانا چاہتے ہیں۔طالبان پاکستان کی ریاست اور اس کے آئین کی بالادستی کو رد کرتے ہوتے اپنی مذہبی سوچ کو دوسروں پر زبردستی نافذ کرنا چاہتے ہیں.
اگر ریاست مسلح عسکریت پسندوں کو اس بات کی اجازت دے دے کہ وہ درندگی کے ساتھ عوام پر اپنی خواہش مسلط کریں تو ایسی ریاست اپنی خودمختاری قائم نہیں رکھ سکتی . بم دھماکے کھلی بربریت ہیں اور دہشت گرد عناصر شہر میں غیر یقینی صورتحال پیدا کرکے ملک میں انتشار پیدا کررہے ہیں۔
دہشت گردی کو کچل کر ملک کو امن و سلامتی کا گہوارہ بنائیں گے۔پاکستانیوں کا خون بہانے والے وحشی درندوں کے خلاف فیصلہ کن جنگ لڑی جارہی ہے ۔پاکستان کی بقاء، استحکام،ترقی و خوشحالی اور آئندہ نسلوں کے محفوظ مستقبل کیلئے ہمیں یہ جنگ ہر قیمت پر جیتنا ہے اور پاک سرزمین کو امن اور انسانیت کے دشمنوں کے ناپاک وجود سے پاک کرنا ہے۔
جس نے کسی انسان کو خون کے بدلے یا زمین میں فساد پھیلانے کے سوا کسی اور وجہ سے قتل کیا گویا اس نے سارے انسانوں کو قتل کر دیا اور جس نے کسی کی جان بچائی اس نے گویا تمام انسانوں کو زندگی بخش دی۔المائدۃ۔۳۲

Advertisements