کراچی صالح مسجد کے باہر دھماکہ


news-1426842487-2001_large

کراچی صالح مسجد کے باہر دھماکہ

آرام باغ کے علاقے پاکستان چوک میں برہانی مسلک کی صالح مسجد کے مین گیٹ کے قریب کھڑی موٹرسائیکل میں نصب بارودی مواد کے دھماکے سے دو نمازی شہید اورخاتون سمیت 20افرادزخمی ہوگئے جنہیں ہسپتال منتقل کردیاگیا۔ شہید ہونیوالے شخص کی شناخت شبیر حسین مڈوالا کے نام سے ظاہر کی گئی ۔

550be7a200c74

ریسکیوذرائع کے مطابق زخمیوں کو برہانی اورسول ہسپتال منتقل کیاگیاجہاں چارزخمیوں کی حالت تشویشناک ہے ۔عینی شاہدین کے مطابق مسجدمیں نماز کی ادائیگی کے بعد نمازی باہر آرہے تھے کہ اس دوران ایک بج کر پچاس منٹ پر دھماکہ ہوگیاجس سے کئی نمازی زخمی ہوگئے جبکہ دھواں پھیل گیا، گیٹ کے قریب کھڑی موٹرسائیکلیں گرگئیں ۔

268715_70812436
مقامی پولیس نے کہاکہ مسجد کے گیٹ پر کھڑی موٹرسائیکل میں بارودی مواد نصب کیاگیاتھا جس سے دھماکہ کیاگیاجبکہ ڈی آئی جی خالد شیخ نے کہاکہ دھماکہ کرنے کے لیے ٹائم ڈیوائس کا استعمال کیا۔
بم ڈسپوزل سکواڈ نے اپنی ابتدائی رپورٹ میں کہاہے کہ دھماکے میں تین سے ساڑھے تین کلوگرام بارودی مواد استعمال کیاگیااوراِس میں نٹ بولٹ اور چھرے بھی استعمال کیے گئے ہیں ۔
سیکیورٹی حکام اور تحقیقاتی ادارے کراچی کے گنجان آباد علاقے میں واقع مسجد کے باہر جائے دھماکہ پرپہنچ گئے اور جائے دھماکہ کو سیل کرکے شہریوں کو دور رہنے کی ہدایت کردی گئی جبکہ شواہد اکٹھے کیے ۔
http://dailypakistan.com.pk/karachi/20-Mar-2015/205094

blood1-579x390
ایڈیشنل ڈی آئی جی کراچی غلام تھیبو نے نجی ٹی وی سے گفتگو میں بتایا کہ دھماکہ آرام باغ کے علاقے میں واقع برہانی مسجد کے باہر ہوا۔ان کا کہنا تھا کہ بوہری برادی کی مسجد کے باہر پارکنگ میں نامعلوم افراد نے ایک موٹر سائیکل پر ٹائم بم نصب کیا تھا۔

550be57ac73bd
اسلام امن اور سلامتی کا دین ہے اور اس میں انتہا پسندی، فرقہ واریت اور دہشت گردی جیسی برائیوں کی کوئی گنجائش نہیں۔ “مسلمان وہ ہے جس کی زبان اور ہاتھ سے دوسرے مسلمان محفوظ رہیں “۔
آج انسانیت کو دہشت گردی کے ہاتھوں شدید خطرات لاحق ہیں کیونکہ دہشت گردی مسلمہ طور پر ایک لعنت و ناسور ہے نیز دہشت گرد نہ تو مسلمان ہیں اور نہ ہی انسان۔ گذشتہ دس سالوں سے پاکستان دہشت گردی کے ایک گرداب میں بری طرح پھنس کر رہ گیا ہے اور قتل و غارت گری روزانہ کا معمول بن کر رہ گئی ہےاور ہر طرف خوف و ہراس کے گہرے سائے ہیں۔ کاروبار بند ہو چکے ہیں اور ملک کی اقتصادی حالت دگرگوں ہے۔

x240-v-L

دہشتگرد ملک کو اقتصادی اور دفاعی طور پر غیر مستحکم اور تباہ کرنے پر تلے ہوئے ہیں اور ملک اور قوم کی دشمنی میں اندہے ہو گئے ہیں اور غیروں کے اشاروں پر چل رہے ہیں۔ انتہا پسند داخلی اور خارجی قوتیں پاکستان میں سیاسی اور جمہوری عمل کو ڈی ریل کرنے کی کو ششیں کر رہی ہیں .خودکش حملے اور بم دھماکے اسلام میں جائز نہیں۔

550bf4dc8c458
قرآن مجید، مخالف مذاہب اور عقائدکے ماننے والوں کو صفحہٴ ہستی سے مٹانے کا نہیں بلکہ ’ لکم دینکم ولی دین‘ اور ’ لااکراہ فی الدین‘ کادرس دیتاہے اور جو انتہاپسند عناصر اس کے برعکس عمل کررہے ہیں وہ اللہ تعالیٰ، اس کے رسول سلم ، قرآن مجید اور اسلام کی تعلیمات کی کھلی نفی کررہے ۔ فرقہ واریت مسلم امہ کیلئے زہر ہے اور کسی بھی مسلک کے شرپسند عناصر کی جانب سے فرقہ واریت کو ہوا دینا اسلامی تعلیمات کی صریحاً خلاف ورزی ہے اور یہ اتحاد بین المسلمین کے خلاف ایک گھناؤنی سازش ہے۔ ایک دوسرے کے مسالک کے احترام کا درس دینا ہی دین اسلام کی اصل روح ہے۔

550bf4c93e0ef
اسلام ایک بے گناہ فرد کے قتل کو پوری انسانیت کا قتل قرار دیتا ہے۔ دہشت گرد خود ساختہ شریعت نافذ کرنا چاہتے ہیں اور پاکستانی عوام پر اپنا سیاسی ایجنڈا مسلط کرنا چاہتے ہیں جس کی دہشت گردوں کو اجازت نہ دی جا سکتی ہے۔معصوم شہریوں، عورتوں اور بچوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنانا، قتل و غارت کرنا، خود کش حملوں کا ارتکاب کرنا اورپرائیوٹ، ملکی و قومی املاک کو نقصان پہنچانا، مسجدوں پر حملے کرنا اور نمازیوں کو شہید کرنا ، عورتوں اور بچوں کو شہید کرناخلاف شریعہ ہے اور جہاد نہ ہے۔ عورتوں اور بچوں کا قتل حالت جنگ میں بھی ممنوع ہے۔

دہشت گرد ،اسلام کے نام پر غیر اسلامی و خلاف شریعہ حرکات کے مرتکب ہورہے ہیں اور اس طرح اسلام کو بدنام کر رہے ہیں۔ طالبان ،لشکر جھنگوی، جندوللہ اور القائدہ ملکر پاکستان بھر میں دہشت گردی کی کاروائیاں کر رہے ہیں ۔ ایک دہشت گرد گروپ کےطاقت کے بل بوتے پر من مانی کرنے کے بڑے دورس نتائج نکل سکتے ہیں۔

Advertisements