طالبان نے ہیلی کاپٹر گرانے کی ذمہ داری قبول کر لی۔


طالبان نے ہیلی کاپٹر گرانے کی ذمہ داری قبول کر لی۔

Moreover, the outlawed Tehreek-i-Taliban Pakistan (TTP) claimed that the incident was the result of an attack it carried out however this could not be independently verified.http://www.dawn.com/…/norway-philippines-envoys-killed…

CEehy4zWMAAzU4o

دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما اور قومی اسمبلی میں دفاع کے متعلق قائمہ کمیٹی کے سربراہ شیخ روحیل اصغر نے نامہ نگار بی بی سی اردو احمد رضا سے بات کرتے ہوئے ہیلی کاپٹر کے حادثے کے بارے میں کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے بیان کو مضحکہ خیز کہتے ہوئے مسترد کر دیا ہے۔ انھوں نےکہا کہ ’میرا نہیں خیال کہ ایسی کوئی بات ہے، اب وہ (طالبان) ایسے ہی خواہ مخواہ خوف پیدا کرنے کے لیے یہ بات کر رہے ہیں۔‘

فوج کے شعبۂ تعلقاتِ عامہ کے سربراہ میجر جنرل عاصم باجوہ کے مطابق ہیلی کاپٹر ٹیکنیکل خرابی کی وجہ سے تباہ ہوا ہے اور کسی قسم کی دہشتگردی کی وجہ سے نہیں۔

http://www.dawn.com/news/1180757/

برطانوی اخبار ’’ڈیلی میل‘‘ کے مطابق تحریک طالبان نے ایک ویڈیو جاری کی ہے، جس میں انہوں نے اپنے اس دعوی کو ثابت کرنے کی کوشش کی کہ پاکستانی ہیلی کاپٹر کو انہوں گرایا اور سفارت کار ہلاک کیے۔ ایک عسکریت پسند نے اپنے کندھے پرچھوٹا میزائل اٹھائے رکھا ہوا ہے۔ طالبان کا دعویٰ ہے کہ اس قسم کے میزائل کے ذریعے ہی نلتر میں گرائے گئے، پاکستان کے فوجی ہیلی کاپٹر کو چند روز قبل نشانہ بنایا گیا۔ اس واقعے میں 2غیر ملکی سفیر اور 2دیگر سفیروں کی بیگمات ہلاک ہوگئی تھیں، 2پائلٹ اور 1کریو ممبر بھی مارا گیا تھا۔ طالبان نے ویڈیو میں دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنایا، 3کلومیٹر دور سے فائر کیا گیا میزائل ہیلی کاپٹر کی دم پر لگا تھا۔ دوسری طرف پاک فوج نے طالبان کے دعوے کو ’’موقع سے فائدہ اٹھانے کے مترادف‘‘ قرار دے کر مسترد کرتے ہوئے، ہیلی کاپٹر کا گرنا حادثہ قرار دیا ہے۔ عسکریت پسند گروپ نے اپنے دعوے کو ثابت کرنے کے لئے نقاب پہنے، 1دہشت گرد کے ہاتھ راکٹ لانچر اٹھائے ہوئے دکھایا گیا۔ انہوں نے اینٹی ائیر کرافٹ گن جیسے ہتھیار سے ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنانے کا دعویٰ کیا۔ ہیلی کاپٹر میں سوار بچ جانے والے بعض غیر ملکی سفیروں کا بھی کہنا ہے کہ یہ حادثہ تھا اور انجن میں خرابی کے باعث پیش آیا۔ اخبار کے مطابق اتوار تک پاکستانی فوج سے اس ویڈیو پر موقف نہیں لیا جاسکا۔
http://urdu.geo.tv/UrduDetail.aspx?ID=184332

نلتر میں ہیلی کاپٹر کو حادثہ، غیرملکی سفیروں سمیت 6 ہلاک

پاکستان کے شمالی علاقے گلگت بلتستان میں پاکستانی فوج کا ایک ہیلی کاپٹر لینڈنگ کے دوران حادثے کا شکار ہوا ہے۔
فوج کے مطابق ہیلی کاپٹر نے کریش لینڈنگ کی اور اس حادثے میں چار غیر ملکیوں سمیت کم از کم چھ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔
ہلاک شدگان میں دو پائلٹوں کے علاوہ ناروے اور فلپائن کے سفیر اور ملائیشیا اور انڈونیشیا کے سفیروں کی بیگمات شامل ہیں۔

554c8c3c36691
فوج کے شعبۂ تعلقاتِ عامہ کے سربراہ میجر جنرل عاصم باجوہ کے مطابق یہ حادثہ جمعے کی صبح نلتر کے علاقے میں پیش آیا۔

554c7e3607f57
ٹوئٹر پر انھوں نے اپنے بیان میں کہا کہ روسی ساخت کا ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر معمول کی پرواز پر تھا اور اس پر 11 غیر ملکی اور چھ پاکستانی سوار تھے۔
اطلاعات کے مطابق یہ ہیلی کاپٹر اترنے کے عمل کے دوران نلتر کے آرمی پبلک سکول کی عمارت سے ٹکرا گیا۔
شعبہ تعلقات عامہ کے سربراہ نے ابتدائی طور پر حادثے میں تین افراد کے زخمی ہونے کی خبر دی تھی تاہم بعدازاں ان کا کہنا تھا کہ حادثے میں دو پائلٹ اور چار غیر ملکی ہلاک ہوگئے ہیں۔
ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہیلی کاپٹر پر سوار بقیہ افراد کو مختلف نوعیت کے زخم آئے ہیں۔
آئی ایس پی آر کے سربراہ کے مطابق زخمی ہونے والوں میں پولینڈ اور ہالینڈ کے سفیر مارسل ڈی ونک بھی شامل ہیں۔
وزیرِ اعظم ہاؤس کے ایک اہلکار کے مطابق یہ تمام افراد نلتر میں پاکستانی فضائیہ کے سکی انگ ریزورٹ کی افتتاحی تقریب میں شرکت کے لیے جا رہے تھے۔
پاکستانی ذرائع ابلاغ کے مطابق اس حادثے کے بعد وزیرِ اعظم نواز شریف کے دورۂ نلتر کو بھی منسوخ کر دیا گیا ہے۔
ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ نواز شریف کو دورانِ پرواز اس حادثے کی اطلاع ملی جس کے بعد وہ گلگت اترے بغیر ہی واپس اسلام آباد آ گئے۔
http://www.bbc.com/urdu/pakistan/2015/05/150508_gilgit_heli_crash_zs

554c8a29b7c62CEefY9MUkAAMGEK

CEeSvYoVIAEsdPkCEeUgE0UUAE27sH

اگر یہ حملہ طالبان دہشتگردوں نے کیا ہے تو یہ نہایت قابل مذمت اور قبیح حرکت ہے جس کا مقصد پاکستان کو قوموں کی برادری میں بدنام کرنا اور تنہا کرنا ہے۔طالبان پاکستان اور اسلام دشمن دہشتگرد ہیں۔
آج انسانیت کو دہشت گردی کے ہاتھوں شدید خطرات لاحق ہیں کیونکہ دہشت گردی مسلمہ طور پر ایک لعنت و ناسور ہے نیز دہشت گرد نہ تو مسلمان ہیں اور نہ ہی انسان۔ گذشتہ دس سالوں سے پاکستان دہشت گردی کے ایک گرداب میں بری طرح پھنس کر رہ گیا ہے اور قتل و غارت گری روزانہ کا معمول بن کر رہ گئی ہےاور ہر طرف خوف و ہراس کے گہرے سائے ہیں۔ کاروبار بند ہو چکے ہیں اور ملک کی اقتصادی حالت دگرگوں ہے۔
دہشتگرد ملک کو اقتصادی اور دفاعی طور پر غیر مستحکم اور تباہ کرنے پر تلے ہوئے ہیں اور ملک اور قوم کی دشمنی میں اندہے ہو گئے ہیں اور غیروں کے اشاروں پر چل رہے ہیں۔ انتہا پسند داخلی اور خارجی قوتیں پاکستان میں سیاسی اور جمہوری عمل کو ڈی ریل کرنے کی کو ششیں کر رہی ہیں اور ایسا کرنے میں تمام دہشت گرد عناصر متحد ہیں۔ کیا دہشت گردوں کو علم نہ ہے کہ مسلم حکومت کے خلاف علم جنگ بلند کرتے ہوئے ہتھیار اٹھانا اور مسلح جدوجہد کرنا، خواہ حکومت کیسی ہی کیوں نہ ہو اسلامی تعلیمات میں اس امر کی اجازت نہیں۔ یہ فتنہ پروری اور خانہ جنگی ہے۔ اور اسلام کی رو سے یہ محاربت و بغاوت، اجتماعی قتل انسانیت اور فساد فی الارض ہے۔؟ یہ لوگ اسلام کا نام ے کر اسلام کو بدنام اور پاکستان کو کمزور کرنے کی کوشش کر رہے. دہشت گرد خود ساختہ شریعت نافذ کرنا چاہتے ہیں اور پاکستانی عوام پر اپنا سیاسی ایجنڈا مسلط کرنا چاہتے ہیں جس کی دہشت گردوں کو اجازت نہ دی جا سکتی ہے۔

Advertisements