شمالی وزیرستان میں دہشتگردوں پر بمباری


resize.php

شمالی وزیرستان میں دہشتگردوں پر بمباری

شمالی وزیرستان کے علاقے دتہ خیل میں سکیورٹی فورسز کی فضائی کارروائی کے دوران 13 دہشت گرد ہلاک جب کہ ان کے 5 ٹھکانے تباہ کردیئے گئے، پاک فوج کے شعبہ ابلاغ عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق سکیورٹی فورسز نے مصدقہ انٹیلی جنس اطلاعات پر شمالی وزیرستان کےعلاقے دتہ خیل میں دہشت گردوں کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا، فضائی حملوں کے نتیجے میں 13 دہشت گرد ہلاک جب کہ ان کے 5 ٹھکانے تباہ ہوگئے۔

واضح رہے کہ شمالی وزیرستان میں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن ضرب عضب جاری ہے جس کے نتیجے میں اب تک 2 ہزار سے زائد دہشت گرد ہلاک ہوچکے ہیں جن میں بڑی تعداد میں غیرملکی بھی شامل ہیں ۔
آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ شمالی وزیرستان میں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن ضرب عضب کامیابی سے جاری ہے اور علاقہ سے دہشت گردوں کے نیٹ ورک کو نیست ونابود کر دیا گیا ہے ۔

zarb-e-azb-update-50-more-terrorists-killed-in-fresh-bombardment-1402982645-7006
دہشت گرد اب فرار ہو رہے ہیں تاہم تعاقب کر کے ان کو ختم کیا جا رہا ہے ۔ آئی ایس پی آر کے مطابق پاک فضائیہ کے جیٹ طیاروں نے شمالی وزیرستان کے علاقہ دتہ خیل میں ایک کارروائی میں دہشت گردوں کے پانچ ٹھکانوں کو تباہ کر دیا ، کارروائی میں تیرہ دہشت گرد بھی مارے گئے۔
پاکستان اپنی تاریخ کے ایک نازک دور سے گزر رہا۔ طالبانی دہشت گردی کی وجہ سے سماجی حالات کے ساتھ ساتھ معاشی حالات بھی بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔دہشت گردوں نے نہ صرف پاکستان کو جہنم بنادیا ہے بلکہ خطے اور دنیا کے امن کیلئے بھی خطرات پیدا کردیئے ہیں۔
دہشت گرد خود ساختہ طالبانی شریعت، جو پاکستانی عوام کو قبول نہیں، نافذ کرنا چاہتے ہیں اور پاکستانی عوام پر اپنا سیاسی ایجنڈا ، طاقت کے زور پر مسلط کرنا چاہتے ہیں جس کی دہشت گردوں کو اجازت نہ دی جا سکتی ہے۔ طالبان کا معصوم پاکستانی عوام کو بے دردی سے قتل کر کے اور متشددانہ طریقے سے طالبانی شریعہ نافذ کرنے کا منصوبہ انتہائی مشکوک و ناقابل عمل و ناقابل قبول ہے۔
پاکستان میں آگ اور خون کی ہولی کھیلنے والے طالبان دہشتگرد، پاکستانی عوام، انسانیت اور اسلام کے کھلے دشمن ہیں، پاکستانی عوام دہشت گردوں کے خاتمہ کے لئے پرعزم ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ میں کامیابی افواج پاکستان اور عوام کی ہو گی۔
دہشت گردوں کا نیٹ ورک اب تباہ ہو چکا ہے اور وہ کوئی بڑی کارروائی کرنے کے قابل نہیں رہے۔ انہوں نے جو اِکا دُکا کارروائیاں کرنے کی کوشش کی اس میں انہیں مُنہ کی کھانا پڑی۔دہشت گردوں کے ٹھکانے اور ان کے نیٹ ورک تباہ کر دیئے گئے ہیں اور بڑے پیمانے پر دہشت گردوں کی ہلاکتیں ہوئیں اور وہ اپنی کمین گاہوں سے نکل کر تِتر بتر ہو گئے ہیں اور اب دہشتگرد سافٹ تارگٹ کو نشانہ بنارہے ہیں۔
ملک میں پچاس ہزار سے زائد پاکستانی دہشت گردی کے واقعات میں اپنی جانیں گنوا چکے ہیں، ملک کی داخلی صورتحال دن بدن تشویشناک ہوتی جا رہی ہے۔طالبان کے حملوں کی وجہ سے ملک کو اب تک 100 ارب ڈالر کا اقتصادی نقصان ہو چکا ہے اور یہ نقصان جاری ہے۔
ترقی کے سفر میں بھی دہشت گردی ایک بڑی رکاوٹ ہے ۔قومی قیادت کا عزم اوراتحاد دہشت گردوں کیلئے عبرتناک انجام کا پیغام ہے ۔ ملک سے دہشت گردی ،انتہاء پسندی اورفرقہ واریت کے خاتمے کیلئے اجتماعی اقدامات کیے جارہے ہیں اور معصوم زندگیوں سے کھیلنے والوں کے خلاف جنگ میں جیت انشاء اللہ 18کروڑ عوام کی ہی ہوگی۔ ملک سے دہشت گردی کا خاتمہ پوری قوم کامتفقہ فیصلہ ہے اوراس مقصد کیلئے سنجیدہ کاوشیں بار آور ثابت ہونگی اورپاکستان ایک بار پھر امن کا گہوارہ بنے گا ۔ دہشت گردی کو جڑسے اکھاڑ پھینکنا ہر پاکستانی کی آواز ہے ۔

Advertisements