یونائیٹڈ بلوچ آرمی کے اہم کمانڈر نے ہتھیار ڈال دیئے


safe_image.php

یونائیٹڈ بلوچ آرمی کے اہم کمانڈر نے ہتھیار ڈال دیئے

کالعدم تنظیم یونائیٹڈ بلوچ آرمی (یو بی اے) کے ایک رہنما نے اپنے 50 ساتھیوں سمیت رضاکارانہ طور پر ہتھیار ڈال دیئے ہیں۔جمعرات کو صوبائی وزیرِآب پاشی نواب جانگیز خان مری کی رہائش گاہ پر ایک پریس کانفرنس کے دوران کالعم تنظیم یو بی اے کے ‘کمانڈر’ ولی محمد عرف حاجی قلاتی نے ہتھیار ڈالنے کا اعلان کیا۔ولی محمد عرف حاجی قلاتی کوہلو، بارکھان اور کاہان ریجن کے ‘کمانڈر’ تصور کیے جاتے تھے۔

commander-withdraw-l

قلاتی نے دعویٰ کیا کہ وہ 1970 سے بلوچستان کی آزادی کے لیے لڑتے رہے ہیں جبکہ انھوں نے 45 سال پہاڑوں میں روپوشی کی زندگی گزاری ہے۔
اس موقع پر قلاتی کا کہنا تھا "مجھے احساس ہوگیا ہے کہ یہ لڑائی قبائلی رہنماؤں نے صرف اپنے ذاتی مفاد کے لیے شروع کی تھی”، ان کا مزید کہنا تھا کہ کالعدم تنظیموں کے رہنماؤں کی اندرونی خانہ جنگیوں اور لڑائی نے انھیں اس نتیجے پر پہنچنے میں مدد فراہم کی ہے۔
جانگیز خان مری نے اس موقع پر مری قبیلے کے افراد کو کہا کہ وہ ہتھیاروں کو الوداع کہہ کر مرکزی دھارے میں شامل ہوجائیں اور ملک و صوبے کی ترقی میں اپنا کردار ادا کریں۔
http://www.dawnnews.tv/news/1022113
حاجی ولی قلاتی ،زمران مری ، جو کہہ یو نائٹیڈ بلوچ آرمی کا سربراہ ہے ،کا لیفٹینٹ تھا۔اس گروپ کی کل تعداد 500 دہشتگرد بتائی جاتی ہے اور یہ گروپ 2000 سے دہشتگردانہ سرگرمیوں میں مصروف ہے۔
خواتین و حضرات دہشتگردی و قتل و غارت گری کی راہ ملک و قوم کی تباہی و بربادی کا راستہ ہے۔ دہشتگردی کا راستہ ترک کر کے ملک و ملت میں امن قائم کرنا،ترقی ، بہتری اور عوامی بہبود کے لئے کام کرنا عین عبادت ہے۔ملک میں معاشی ترقی امن و آشتی کے ماحول ہی میں ممکن ہے ۔ہتھیار ڈال کر دہشتگرد ملکی سیاسی و جمہوری دہارے میں شامل ہو جائیں گےاور جمہوری طریقوں سے حقوق کے حصول و حفاظت کی پر امن جدوجہد کر سکتے ہیں۔
اسلام امن و سلامتی کا مذہب ہے اور امن کے مقاصد کو آگے بڑہاتا ہے۔ دہشتگردوں کو یہ علم ہونا چاہئیے کی اسلامی ریاست کیخلاف مسلح جدوجہد حرام ہے۔ معصوم اور بیگناہوں کےناحق قتل کی اسلام میں ممانعت ہے۔ مسلمان وہ ہے جس کی زبان اور ہاتھوں سے دوسرے مسلمانوں کو گزند نہ پہنچے۔ اسلام امن اور سلامتی کا دین ہے اور دہشتگرد اسلا م اور پاکستان اور امن کے دشمن ہیں ، ان کی اختراع وسوچ اسلام و پاکستان مخالف ہے ۔اسلام کا پیغام امن ،محبت، بھائی چارگی اور احترام انسانیت ہے۔ دہشتگرد پاکستان کو نقصان پہنچا کر ملک میں عدم استحکام پیدا کرناچاہتے ہیں۔
ملک میں معاشی ترقی اور صنعتیں تب ہی لگیں گی اور غیر ملکی سرمایہ کاری تب ہو گی جب ملک میں امن و امان ہو گا ۔اس وقت ملک کو دہشت گردی کا سامنا ہے اور دہشت گردی کی وجہ سے ملک کی معاشی حالت دگرگوں ہو چکی ہے۔پاکستان بدحالی کے دھانے پر کھڑا ہے۔ معیشت بند گلی مین داخل ہو گئی ہے اور کوئی ملک پاکستان کو بیل آوٹ پلان دینے کے لئے تیار نہیں۔ سنگین حالات سے نکالنے کے لئے قومی یکجہتی سے مشترکہ حکمت عملی اپنانا ہو گی۔ لہذا عوام دل و جان سے دہشت گردی کے خاتمے کے لئے اور ملکی معاشی بہتری کے لئے حکومت سے تعاون کریں۔دہشت گردی جیسے فتنے سے نمٹنا تو ہر مسلمان اور پاکستانی کی اولین ذمہ داری ہے۔

Advertisements