روزہ کینسر، امراض قلب اور بڑھاپے سے بچاتا ہے


368670-roza-1434873098-848-640x480

روزہ کینسر، امراض قلب اور بڑھاپے سے بچاتا ہے
ویب ڈیسک اتوار 21 جون 2015
ماہرین کے مطابق اگر ایک ماہ میں پانچ مرتبہ جسم کو دی جانے والی کیلریز کی نصف مقدار استعمال کی جائیں تو کینسر، ذیابیطس اور امراضِ قلب کے خطرے میں نمایاں کمی ہوتی ہے۔روزہ رکھنے سے دل، امراضِ قلب اور کینسر کے علاوہ کئی چھوٹے بڑے امراض سے محفوظ رہا جاسکتا ہے۔ اسی طرح کم ازکم چھ گھنٹے تک صرف پانی پراکتفا کرنے سے بھی صحت پرغیرمعمولی اثرات مرتب ہوتے ہیں بشرطیکہ اس پر ایک ماہ میں کئ بار پابندی سے عمل کیا جائے۔

2859593060_d48b0ed05b

دوسری جانب بین الاقوامی ماہرین روزے کے درج ذیل فوائد بیان کرتے ہیں۔

152637-Kidsfasting-1374422773-253-640x480
وزن اور چکنائی میں کمی :
کئی اداکار اور کھلاڑی ہفتے میں ایک دو مرتبہ فاقہ کرتے ہیں یا پھر صرف پانی پر گزارہ کرتے ہیں جس سے وزن گھٹانے اور جسم میں چکنائی کم کرنے میں مدد ملتی ہے۔
انسولین کی حساسیت میں بہتری :
فاقہ کرنےسے جسم میں انسولین کی حساسیت بہترہوتی ہے۔ اس کے علاوہ نظام ہاضمہ میں بہت بہتری پیدا ہوتی ہے اور بدن میں استحالہ ( میٹابولزم) کا عمل بھی بہترہوتا ہے۔
روزے سے عمر میں اضافہ :
مختلف تہذیب اور معاشروں کا مطالعہ کیا گیا ہے جس کے بعد انکشاف ہوا ہے کہ کم کھانے سے ایک تو بڑھاپے کا عمل سست ہوتا ہے اور دوسرا فاقہ کشی کرنے والے افراد طویل عمر پاتے ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ کبھی کبھی کبھار کم کھانے سے نظام ہاضمہ پرزور نہیں پڑتا اور خلیات میں ٹوٹ پھوٹ کا عمل سست ہوتا ہے۔
روزہ اور دماغی صلاحیت میں بہتری :
ماہرین کا کہنا ہے کہ فاقے سے دماغی افعال میں بہت بہتری پیدا ہوتی ہے۔ روزہ رکھنے سے دماغ میں بی ڈی این ایف نامی ایک پروٹین کی پیداوار بڑھ جاتی ہے۔ اس سے دماغ میں نئے خلیات پیدا ہوتے ہیں اور دماغ کے لیے مفید کیمکلز کی پیداوار میں اضافہ ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ پارکنسن اور الزائیمر جیسے امراض کا راستہ بھی رک جاتا ہے۔
فاقے سے کینسر اور ذیابیطس میں کمی :
یونیورسٹی آف سدرن کیلیفورنیا کے ماہرین نے معلوم کیا ہے کہ اگر ایک ماہ میں پانچ دفعہ فاقے کی کیفیت سے گزرا جائے یا خوراک میں موجود کیلریز کی مقدار آدھی کردی جائے تو اس سے کینسر، ذیابیطس اور دیگر موذی امراض کا خطرہ کم کیا جاسکتا ہے۔
ماہرین نے رضاکاروں کو 3 ماہ تک اس پروگرام پرعمل کرانے کے بعد ان کا جائزہ لیا تو ان میں امراض قلب، کینسراورعمررسیدگی کے اثرات کم دیکھے گئے۔ ماہرین کا خیال ہے کہ اس کی وجہ یہ ہے کہ نظام ہاضمہ کو آرام دینے سے بدن میں کئی اہم تبدیلیاں واقع ہوتی ہیں جو کئی بیماریوں سے بچاتی ہیں۔
http://www.express.pk/story/368670/

ramadan2

images
دنیا کے ایک ارب سے زائد مسلمان اسلامی و قرآنی احکام کی روشنی میںبغیر کسی جسمانی و دنیاوی فائدے کاطمع کئے تعمیلاًروزہ رکھتے ہیں تاہم روحانی تسکین کے ساتھ ساتھ روزہ رکھنے سے جسمانی صحت پر بھی مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیںجسے دنیا بھر کے طبی ماہرین خصوصا ڈاکٹر مائیکل’ ڈاکٹر جوزف’ ڈاکٹر سیموئیل الیگزینڈر’ڈاکٹر ایم کلائیو’ڈاکٹر سگمنڈ فرائیڈ’ڈاکٹر جیکب ‘ڈاکٹر ہنری ایڈورڈ’ڈاکٹر برام جے ‘ڈاکٹر ایمرسن’ ڈاکٹرخان یمر ٹ ‘ڈاکٹر ایڈورڈ نکلسن اور جدید سائنس نے ہزاروں کلینیکل ٹرائلز سے تسلیم کیا ہے روزہ شوگر لیول ‘کولیسٹرول اوربلڈ پریشر میں اعتدال لاتا ہے اسٹریس و اعصابی اور ذہنی تناؤختم کرکے بیشتر نفسیاتی امراض سے چھٹکارا دلاتاہے روزہ رکھنے سے جسم میں خون بننے کا عمل تیز ہوجاتا ہے اور جسم کی تطہیر ہوجاتی ہے۔اس امر کا اظہار مرکزی سیکرٹری جنرل کونسل آف ہربل فزیشنز پاکستان اور معروف یونانی میڈیکل آفیسر حکیم قاضی ایم اے خالد نے ماہ صیام کی آمد کے موقع پرکونسل ہذا کے زیراہتمام ایک مجلس مذاکرہ بعنوان” روزہ اور جدید سائنس” سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ روزہ انسانی جسم سے فضلات اور تیزابی مادوں کا اخراج کرتا ہے روزہ رکھنے سے دماغی خلیات بھی فاضل مادوں سے نجات پاتے ہیں جس سے نہ صرف نفسیاتی و روحانی امراض کا خاتمہ ہوتا ہے بلکہ اس سے دماغی صلاحیتوں کو جلامل کر انسانی صلاحیتیں بھی اجاگر ہوتی ہیں وہ خواتین جواولاد کی نعمت سے محروم ہیں اور موٹاپے کا شکار ہیں وہ ضرور روزے رکھیں تاکہ ان کا وزن کم ہوسکے ‘یا د رہے کہ جدید میڈیکل سائنس کے مطابق وزن کم ہونے سے بے اولاد خواتین کو اولاد ہونے کے امکانات کئی گنا بڑھ جاتے ہیں۔
http://www.hakeemkhalid.tk/2014/06/blog-post_29.html

Advertisements

“روزہ کینسر، امراض قلب اور بڑھاپے سے بچاتا ہے” پر ایک تبصرہ

تبصرے بند ہیں۔