خوبانی حیرت انگیز فوائد کا پھل


c98754ca7f3cd3c3104714240b42f656_XL

خوبانی حیرت انگیز فوائد کا پھل

طبی ماہرین کے مطابق ”خوبانی“ چاہے تازہ ہو یا خشک انسانی صحت کیلئے حیرت انگیز فوائد کا حامل اور غذائیت سے بھر پور ایک پھل ہے جس کا استعمال آنکھوں ‘ آنتوں ‘ بخار اور سرطان جیسے امراض میں اکسیر ہے۔ خوبانی میں حیاتین الف‘ ج‘ سمیت پوٹاشیم ‘ فولاد اور بیٹا کیروٹین بکثرت پائے جاتے ہیں۔

5556487_l

516UaOOWDNL

indexvgy

dried-apricot-max-2000-ppm
خوبانی سرد پہاڑی علاقوں میں پیدا ہونے والا ذائقہ اور غذائیت سے بھر پور پھل ہے۔ اس کا اوپر والا زردی مائل سفید پکا ہوا گودہ اپنے جوبن میں گلابی جھلک لیے ہوئے ہوتا ہے۔ پکے ہوئے پھل کا چھلکا بے حد لذیذ اور فرحت بخش ہوتا ہے۔ اپنی غذائیت اور قوت بخش ہونے کی وجہ سے یہ دنیا میں مقبولِ عام ہے۔ خوبانی کا نباتاتی نام Prun Us Arminiace ہے۔ اس کا پیدائشی گھر چائنا ہے۔ جبکہ پاکستان میں کوہستانی علاقوں میں ہوتی ہے۔ مگر ہنزہ اس کا اعلیٰ مرکز ہے۔

123428_fa_rszd

250238_197360580322053_100001443384184_516906_8290416_n-783745

ہمارے یہاں پر خوبانی دو قسم کی ہوتی ہے۔ ایک کا رنگ ہلکا پیلا اور دوسری قسم کا رنگ زرد ہے۔ خوبانی کی دنیا بھر میں 20 سے زائد اقسام پائی جاتی ہیں۔ خوبانی تازہ اور خشک دونوں صورتوں میں استعمال کی جاتی ہے۔ اس کو تین طریقوں سے محفوظ بھی کیا جاتا ہے۔ ۱) خشک کر لیا جاتا ہے۔ ۲) تازہ خوبانی کو ہلکے شکر کے قوام میں محفوظ کر کے ڈبوں میں بند کر دیا جاتا ہے۔ ۳) خوبانی کو پیس کر آٹے کی شکل میں محفوظ کر لیا جاتا ہے جو کہ چپاتی بنانے کے کام آتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ خوبانی متعدد غذائی اجزاء سے مالا مال ہے۔تازہ خوبانی میں قدرتی شکر، وٹامن اے، سی ، ای ، پوٹاشیم، کیلشیم اور فاسفورس موجود ہوتے ہیں۔ خوبانی سے حاصل ہونے والے بادام میں پروٹین اور چکنائی ہوتی ہے۔ جبکہ خشک خوبانی میں بھی پروٹین، فروٹوز، معدنی نمکیات، چونے، فاسفوس، فولاد کے ساتھ کچھ مقدار میں وٹامن بی کمپلیکس بھی ہوتا ہے۔ سرد ملکوں اور عرب ممالک میں سارا سال خشک خوبانی کا استعمال بہت زیادہ ہے۔ تازہ کے مقابلے میں خشک خوبانی زیادہ مزے دار ہوتی ہے، جسے سال بھر کھاکر صحت اور توانائی میں اضافہ کیاجاسکتا ہے۔
یہ جسم میں توانائی پیدا کر تی ہے-
خوبانی کے استعمال سے خون میں حرارت اور حدت پیدا ہوتی ہے– خوبانی قبض کشا ہوتی ہے اور خوراک کو جلد ہضم کرتی ہے-
خوبانی کا مربہ بنایا جاتا ہے جو مقوی دل، مقوی معدہ اور مقوی جگر ہوتا ہے-
خوبانی کے مغز کے فوائد مغز بادام کے برابر ہوتے ہیں-
خوبانی میں بہترین غذائیت ہوتی ہے۔ جو انسانی جسم کے لیے بہت مفید ہے-
خوبانی خون اور جو ش خون کو فا ئدہ دیتی ہے-
خوبا نی کے درخت کے پتے اگر دو تولہ رگڑ کر پلائے جائیں تو پیٹ کے کیڑے اس سے مر جا تے ہیں-
سوزش معدہ اور بوا سیر کے لیے مفید ہے-
جگر کی سختی کو دور کر تی ہے-
نزلہ، زکام ، گلے کی خرا ش اورمنہ کی بد بو دور کرنے کے لیے روزانہ دس دانہ خوبانی ہمراہ گرم پانی استعمال کرنا مفید ہوتا ہے۔ خوبانی میں شامل لائکوپین (LYCOPENE) دل کے لیے مضر کولیسٹرول ایل ڈی ایل ( LDL) کی سطح کم کرکے شریانوں کو صاف رکھتا ہے۔ واضح رہے کہ لائکوپین ایک اہم مانع سرطان کے طور پر بھی مفید اور مئوثر تسلیم کرلیاگیا ہے۔ شریانوں کے صاف رہنے سے دل کولیسٹرول اور دیگر زہریلے اثرات سے محفوظ رہتا ہے۔ اس کے علاوہ موٹاپا لاحق نہیں ہوتا اور ذیابیطس کاخطرہ بھی دور ہوجاتا ہے۔

Advertisements