عراق میں سکیورٹی چیک پوسٹ پر خودکش کار بم حملہ ،سات افراد ہلاک ،11زخمی


news-1468401718-5575_large

عراق میں سکیورٹی چیک پوسٹ پر خودکش کار بم حملہ ،سات افراد ہلاک ،11زخمی

عراق کے دارالحکومت بغدادمیں ایک سکیورٹی چیک پوسٹ پر ہونے والے کار خودکش بم دھماکے میں سات فراد ہلاک جب کہ 11زخمی ہو گئے ہیں۔

Mideast_Iraq-2f6f1

تفصیلات کے مطابق سکیورٹی اور طبی ذرائع کا کہنا ہے کہ واقعہ بغداد کے شمال میں واقع راشدیہ کے علاقہ میں پیش آیا جہاں ایک خودکش بمبار نے بارود سے بھری گاڑی کو ایک چیک پوسٹ پر لے جاکر اڑادیا۔دھماکے سے بڑے پیمانے پر تباہی پھیل اور سات افراد لقمہ اجل بنے۔یہ واقعہ گزشتہ چند روز میں اس ضلع میں پیش آنے والا دوسرا بم دھماکہ ہے۔
برطانوی خبررساں ادارے کے مطابق فوری طور پر اس حملے کی ذمہ داری کسی نے قبول نہیں کی تاہم ایسےشدت پسند تنظیم داعش عراقی دارالحکومت بغداد سمیت ملک کے مختلف حصوں میں اس قسم کے بم حملوں میں ملوث رہی ہے اور ذمہ داری بھی قبول کرتی رہی ہے۔
http://dailypakistan.com.pk/arabworld/13-Jul-2016/412422

اس خودکش کار بم حملے میں 6 سویلین اور دو پولیس والے بھی ہلاک ہو گئے ہیں۔

http://www.bigstory.ap.org/article/76abb6ce672e472cae24a39cd1163f25/iraq-officials-suicide-car-bomb-kills-8-baghdad-district
خودکش حملے،دہشت گردی اور بم دھماکے اسلام میں جائز نہیں یہ اقدام کفر ہے اور قران و حدیث میں خودکشی کی سختی سے ممانعت کی گئی ہے.

جہاد وقتال فتنہ ختم کرنے کیلئے ہے ناکہ مسلمانوں میں فتنہ پیدا کرنے کیلئے۔

دہشتگرد جان لیں کہ وہ اللہ کی مخلوق کا بے دردی سے قتل عام کر کے اللہ کے عذاب کو دعوت دے رہے ہیں اور اللہ اور اس کے پیارے رسول صلم کی ناراضگی کا سبب بن رہے ہیں. حدیث رسول اللہ میں ہے کہ انسانی جان کی حرمت خانہ کعبہ کی حرمت سے زیادہ بیان ہے۔۔ بے گناہ اور معصوم لوگوں کے قتل کی اسلام میں ممانعت ہےاور اسلام کسی بھی انسان کے ناحق قتل کو پوری انسانیت کا قتل قرار دیتا ہے۔

اسلامی ریاست کیخلاف مسلح جدوجہدکرنا یا ہتحیار اٹھانا حرام ہے۔

اسلام ایک امن پسند مذہب ہے جو کسی بربریت و بدامنی کی ہرگز اجازت نہیں دیتا۔ دہشتگرد جان لیں کہ وہ اللہ کی مخلوق کا بے دردی سے قتل عام کر کے اللہ کے عذاب کو دعوت دے رہے ہیں اور اللہ اور اس کے پیارے رسول صلم کی ناراضگی کا سبب بن رہے ہیں.

داعش خوارج قاتلوں ،جنونی ،انسانیت کے قاتل اور ٹھگوں کا گروہ ہے جو اسلام کی کوئی خدمت نہ کر رہاہے بلکہ مسلمانوں اور اسلام کی بدنامی کا باعث ہے اور مسلمان حکومتوں کو عدم استحکام میں مبتلا کر رہا ہے۔ داعش کے مظالم کے سامنے ہلاکو اور چنگیز خان کے مظالم ہیچ ہیں۔داعش کے پیروکار ایسے نظریے کے ماننے والے ہیں جس کی مسلم تاریخ میں مثال نہیں ملتی،داعش کے ارکان کا تعارف صرف یہی ہے کہ وہ ایسے مجرم ہیں جو مسلمانوں کا خون بہانا چاہتے ہیں۔ سعودی مفتی اعظم کا کہنا تھا کہ اس تنظیم میں شمولیت اختیار کرنیوالے نادان اوربے خبرہیں۔

دہشتگرد تنظیمیں جہالت اور گمراہی کےر استہ پر ہیں۔

Advertisements