فرانس میں وحشتناک دہشتگرد حملہ ، خواتین اور بچوں سمیت 84 افراد ہلاک


FEBEFC5D-E126-455E-A838-9C486E7E7FC4_cx0_cy9_cw0_mw1024_s_n_r1

فرانس میں وحشتناک دہشتگرد حملہ ، خواتین اور بچوں سمیت 84 افراد ہلاک

فرانس میں قومی دن کی تقریب کے موقع پر ٹرک میں سوار حملہ آور نے لوگوں کو کچلنے کے بعد فائرنگ کر کے کم از کم 884 افراد کو ہلاک اور 140 سے زائد کو زخمی کردیا۔

20160714-zaf-m17-350-jpg
غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق فرانس کے قصبے نیس میں قومی دن کی تقریبات کا جشن منانے کے لئے بڑی تعداد میں لوگ جمع تھے کہ ٹرک میں سوار حملہ آور نے گاڑی ہجوم میں چڑھا دی، حملہ آور پہلے لوگوں کو کچلتا ہوا 100 میٹر تک گیا پھر اس نے فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں کم از کم 84 افراد ہلاک جب کہ درجنوں زخمی ہو گئے، ہلاک اور زخمیوں میں بڑی تعداد میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔ امدادی ٹیموں کے اہلکاروں نے حملے میں ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو فوری طور پر قریبی اسپتالوں میں منتقل کیا جب کہ نیس کے میئر نے پورے شہر کے اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی ہے۔

nice-650_650x400_51468542454
فرانسیسی میڈیا کے مطابق ٹرک ڈرائیور نے بیسٹل ڈے کی تقریبات کے اختتام پر ہونے والی آتش بازی کے موقع پر حملہ کیا، حملہ آور تیونس نژاد فرانسیسی شہری تھا اور اس کی عمر تقریباً 31 برس تھی، حملہ آور دوہری شہریت کا حامل تھا۔ پولیس کی جوابی کارروائی میں حملہ آور بھی ہلاک ہو گیا جب کہ ٹرک سے بڑی تعداد میں گرینیڈ اور بارودی مواد بھی برآمد کر لیا گیا۔

imagesvbh
فرانسیسی صدر فرانسو اولاندو نے ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے واقعہ کو دہشت گردی قرار دیتے ہوئے انسانی جانوں کے ضیاع پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا اور ملک میں نافذ ایمرجنسی کی معیاد میں مزید 3 ماہ کی توسیع کری، فرانسیسی صدر نے حملے میں 77 ہلاکتوں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ 20 زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کے خلاف ہر ممکن اقدام اٹھایا جائے گا۔ دوسری جانب نیس میں حملوں کے بعد فرانس کے دیگر شہروں میں بھی سییکیورٹی ہائی الرٹ کر دی گئی ہے جب کہ تفتیشی اداروں نے شواہد اکٹھے کر کے تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔

578850591e6b0
امریکی صدر براک اوباما نے بھی نیس حملے میں ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اسے دہشت گردی قرار دیا ہے اور فرانس کو حملے میں تعاون کی پیش کش کر دی۔ برطانیہ کی نو منتخب وزیراعظم تھریسامے نے بھی ہلاکتوں پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔ کینیڈا کے وزیراعٖظم نے بھی حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے جب کہ امریکی صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ فرانس میں ایک اور دردناک حملہ ہو گیا، ہم کب سیکھیں گے۔

http://www.express.pk/story/557272/

فرانس کے جنوبی شہر نیس میں ہونے والے ٹرک حملے کی ذمہ داری شدت پسند تنظیم داعش نے قبول کرلی۔یاد رہے کہ گذشتہ روز ایک ڈرائیور نے فرانس کے قومی دن کی تقریبات میں شریک افراد پر ٹرک چڑھادیا تھا، جس کے نتیجے میں 84 افراد ہلاک جبکہ 200 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق داعش نے اپنے بیان میں کہا کہ جس شخص نے فرانسیسی شہر نیس میں آتش بازی کے مظاہرے میں شریک افراد پر ٹرک چڑھایا، وہ ان کا ‘سپاہی’ تھا۔

http://www.dawnnews.tv/news/1040356/

واقعہ میں84افراد ہلاک جبکہ  140سے زائد زخمی  ہوئے۔

http://dailypakistan.com.pk/international/15-Jul-2016/413451
فرانسیسی میڈیا کا مزید کہنا ہے کہ ٹرک ڈرائیورنے لوگوں کو کچلنے کے بعد فائرنگ بھی کی جس سے زیادہ جانی نقصان ہوا تاہم پولیس کی جوابی فائرنگ سے حملہ آور بھی مارا گیا جس کی شناخت بھی ہو گئی ہے اور اس کا تعلق بھی شہر نیس سے ہی بتایا جاتا ہےجو پولیس کو بھی مطلوب تھا ۔ڈرائیور نے 50 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے 2 کلو میٹر تک ٹرک کو ہجوم پر بھگایا۔ فرانس کے شہر وینس میں دہشت گرد کی جانب سے ہجوم کو کچلنے کے واقعہ کو عینی شاہدین نے قیامت صغریٰ سے تعبیر کرتے ہوئے بتایا ہے کہ حملے کے وقت ایسی افراتفری اور نفسا نفسی دیکھی گئی جواس سے قبل زندگی بھر نہیں دیکھی تھی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ٹرک کے ڈرائیور کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا ہے جبکہ ٹرک میں سے بندوقیں اور گرنیڈ ملے ہیں۔فرانسیسی ذرائع ابلاغ کے مطابق ٹرک ڈرائیور تیونسی نژاد فرانسیسی تھا اور ممکنہ طور وہ نیس کا رہائشی تھا۔
دہشت گردی اسلام میں جائز نہیں یہ اقدام کفر ہے ۔ اسلام ایک امن پسند مذہب ہے جو کسی بربریت و بدامنی کی ہرگز اجازت نہیں دیتا۔

داعش کےدہشتگرد جان لیں کہ وہ اللہ کی مخلوق کا بے دردی سے قتل عام کر کے اللہ کے عذاب کو دعوت دے رہے ہیں اور اللہ اور اس کے پیارے رسول صلم کی ناراضگی کا سبب بن رہے ہیں. حدیث رسول اللہ میں ہے کہ انسانی جان کی حرمت خانہ کعبہ کی حرمت سے زیادہ بیان ہے۔ بے گناہ اور معصوم لوگوں کے قتل کی اسلام میں ممانعت ہےاور اسلام کسی بھی انسان کے ناحق قتل کو پوری انسانیت کا قتل قرار دیتا ہے۔
اسلام امن اور محبت کا دین ہے۔ داعش دہشتگرد تنظیم جہالت اور گمراہی کےر استہ پر ہیں۔جہاد کے نام پر بے گناہوں کا خون بہانے والے دہشتگرد ہیں۔یہ دہشتگرد اسلام کو بدنام اور امت مسلمہ کو کمزور کر رہے ہیں۔

عورتوں اور بچوں کا قتل حالت جنگ میں بھی منع ہے۔

داعش خوارج قاتلوں ،جنونی ،انسانیت کے قاتل اور ٹھگوں کا گروہ ہے جو اسلام کی کوئی خدمت نہ کر رہاہے بلکہ مسلمانوں اور اسلام کی بدنامی کا باعث ہے ۔ فرانس میں جو تازہ دہشتگردی ہوئی ہے اسکے زبردست سیاسی اور اسٹریٹیجک نتائج براآمد ہونگے۔یہ دہشتگردی آزاد دنیا کے دہشتگردی کے خلاف عزم کو متزلزل نہ کر سکے گی۔

 

Advertisements