پنیر صحت کے لئے مفید


cheese-deli14

پنیر صحت کے لئے مفید

کوپن ہیگن یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق پنیر کھانے کی عادت جسم میں صحت کے لیے فائدہ مند اچھے کولیسٹرول (ایچ ڈی ایل) کی مقدار میں اضافہ کرتی ہے جس سے خون کی شریانوں (بلڈ پریشر، امراض قلب، فالج) اور میٹابولک امراض (ذیابطیس وغیرہ) سے تحفظ ملتا ہے۔

american_cheese_platter

اس تحقیق کے دوران محققین نے 12 ہفتوں تک 139 افراد کو فل فیٹ پنیر پر مشتمل غذا کھلائی اور نتائج سے معلوم ہوا کہ اس نے جسم پر مختلف انداز سے اثرات مرتب کیے ہیں۔
اس تجربے کے دوران رضاکاروں کو تین گروپس میں تقسیم کیا گیا تھا، ایک گروپ کو روزانہ 80 گرام ہائی فیٹ پنیر کھانے کی ہدایت کی گئی، دوسرے گروپ کو کم چربی والا پنیر جبکہ تیسرے گروپ کو پنیر کی بجائے روزانہ 90 گرام ڈبل روٹی اور جیم کھلایا گیا۔
نتائج سے معلوم ہوا کہ کسی بھی گروپ میں نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح میں اضافہ نہیں ہوا جو کہ سابقہ رپورٹس کے متضاد تھا جن کے مطابق زیادہ چربی والا پنیر دل کی صحت کو نقصان پہنچاتا ہے۔محققین نے بتایا کہ اس کی بجائے پنیر کھانے کے نتیجے میں فائدہ مند کولیسٹرول کی سطح میں اضافہ ہوا۔

index-jpgbhu
اس سے قبل حال ہی میں جاپان میں ہونے والی ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ پنیر کھانے کی عادت جگر میں چربی بڑھنے کی روک تھام کرتا ہے ۔
طب اور صحت سے متعلق بین الاقوامی جریدے ’’جرنل آف ایگری کلچر اینڈ فورڈ کیمسٹری‘‘ میں ڈنمارک کی کوپن ہیگن یونیورسٹی اور آرہس یونیورسٹی کے ماہرین کی مشترکہ ٹیم نے نیر کے استعمال اور موٹاپے کے درمیان تعلق کے حوالے سے تحقیق شائع کی ہے ، جس میں کہا گیا ہے کہ پنیر میں انسانی صحت کے لئے مفید فیٹی ایسڈ ’’بیوٹاریڈ‘‘ پایا جاتا ہے جو جسم میں موجود فاضل چربی کو توانائی تبدیل کرتا ہے جس سے موٹاپے میں کمی کے لئے مدد ملتی ہے۔

index
پنیر کھانے کی عادت خون کی شریانوں کے امراض اور ذیابیطس ٹائپ ٹو سے تحفظ دے سکتی ہے۔ تحقیق میں کہا گیا ہے کہ پنیر سچورٹیڈ فیٹ اور نمک سے بھرپور ہوتا ہے اور لوگوں کا خیال ہے کہ اسے کھانا شریانوں کے امراض کا خطرہ بڑھاتا ہے مگر نتائج اس کے برعکس ہیں، ایسا نظر آتا ہے کہ اس کے نتیجے میں شریانوں کے امراض اور ٹائپ ٹو ذیابیطس کا خطرہ کم ہوتا ہے۔ دوسری جانب برٹش میڈیکل جرنل میں شائع ایک تحقیق کے مطابق حیوانی فیٹ صحت کے لیے اتنا بھی نقصان دہ نہیں جتنا آپ سمجھتے ہیں۔ تحقیق کے نتائج سے معلوم ہوا کہ یہ صحت کے لیے نقصان دہ کی بجائے فائدہ مند چیز ہے۔ یعنی لوگ مکھن اور پنیر کو استعمال کرسکتے ہیں اور یہ دل کے لیے اتنا نقصان دہ نہیں جتنا دعویٰ کیا جاتا ہے۔ محققین کے مطابق پنیر کا معتدل استعمال صحت کے لیے بہتر ثابت ہوتا ہے اور یقیناً حد سے زیادہ استعمال کسی بھی چیز کا ہو وہ نقصان دہ ہی ثابت ہوتی ہے۔

Advertisements