وٹا منز کی زیادتی صحت کے لئے نقصان دہ


5807bf5c0fea6-620x330

وٹا منز کی زیادتی صحت کے لئے نقصان دہ

وٹامنز سپلیمنٹس کو بیشتر افراد محفوظ اور امراض سے لڑنے کے لیے مفید سمجھتے ہیں مگر یہ صحت کے لیے سنگین خطرہ بھی ثابت ہوسکتے ہیں۔زیادہ مقدار میں وٹامن سپلیمنٹس کے باقاعدہ استعمال سے جگر کی خرابی اور پیدائشی نقائص کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔

pic_1476876935-jpg-_3

اگرچہ سپلیمنٹس سے جگر کو نقصان پہنچنے کا امکان کم ہوتا ہے تاہم ان کا زیادہ استعمال کیا جائے، انہیں دیگر سپلیمنٹس کے ساتھ ملا کر استعمال کیا جائے یا ڈاکٹروں کے مشورے کے بغیر استعمال کیا جائے تو خطرہ بڑھنے لگتا ہے۔ وٹامنز ،جن کا استعمال روزانہ تجویز کردہ خوراک کے میعار سے اگر تجاوز کرجائے تو صحت کے لیے سنگین خطرناک کا باعث بن سکتا ہے ۔ اضافی مقدار میں نیاسن (Niacin) جسے عام طور پر Nicotinicacidیاوٹامن B3 بھی کہتے ہیں‘ استعمال کرنے سے جگر کونقصان پہنچنے کے خطرات میں اضافہ ہوسکتا ہے خاص طور پر حاملہ خواتین جو زیادہ مقدار میں اسے استعمال کرتی ہیں ان کے بچوں میں پیدائشی نقائص دیکھے گئے ہیں۔
اکثر لوگوں کاخیال ہے حیاتین ( Vitamins) اور معدنیات (Minerals) صحت بخش ہوتے ہیں اس لیے زیادہ مقدار میں ان کااستعمال فائدہ مند ہی ثابت ہوگا۔ لیکن تحقیقی گروپ کے سربراہ ڈاکٹر جے مائیکل مک گینس (Dr.j.Micheal Mc Ginnis) کے مطابق زیادہ مقدار میں بعض حیاتین اور معدنیات کااستعمال جن میں وٹامن Aاور آئرن شامل ہیں،ا نتہائی خطرناک ثابت ہوسکتا ہے جب کہ دیگر حیاتین اور معدنیات کی جسم میں اضافی مقداریورین کے ذریعے خارج ہوجاتی ہے ۔برطانوی ماہرین کا کہنا ہے خواتین کا دوران حمل دواﺅں کی صورت میں ملٹی وٹامنز‘ فولاد اور کیلشیم کا استعمال پیسوں کے ضیاع کے سوا کچھ نہیں‘ بلکہ ان میں سے بعض اشیاءکا زیادہ استعمال حاملہ ماﺅں کے لئے نقصان دہ بھی ہوسکتا ہے۔ وٹامن اے کا بہت زیادہ مقدار میں استعمال پیٹ میں موجود بچے کے لئے نقصان دہ ہوسکتا ہے۔

Advertisements