صومالیہ کے دارالحکومت میں ہوٹل پر حملہ، 28 افراد ہلاک


l_256596_073347_updates

صومالیہ کے دارالحکومت میں ہوٹل پر حملہ، 28 افراد ہلاک

صومالیہ کے دارالحکومت موغادیشو میں مقامی دایاہ  ہوٹل پر  مسلح ملزمان نے بارود سے بھری ہوئی گاڑی ٹکرانے کے بعد ہوٹل پر فائرنگ کردی جس کے جواب میں سیکیورٹی اہلکاروں نے بھی جوابی کارروائی کی لیکن واقعے کی اطلاع ملنے پر جیسے ہی ریسکیو اہلکار،  صحافی اور قانون نافذ کرنے والے ادارے کے اہلکار موقع پر پہنچے تو اس دوران ایک اور دھماکا ہوگیا جس کے نتیجے سیکیورٹی اہلکاروں سمیت 28  افراد ہلاک ہوگئے۔

719338-somaliablast-1485367916-191-640x480-gif

mogadishu-hotel-explosion

images-jpgnji

mogadishu-hotel-explosion

_93800351__93799390_d552fe5f-ad29-4208-b32b-7a558db93997

dfrtgf

_90971247_mediaitem90971246

ریسکیو ادارے کے مطابق دونوں دھماکوں میں 28 افراد کی ہلاکت کے ساتھ 43 افراد زخمی بھی ہوئے جن میں صحافی اور سیکیورٹی اہلکار بھی شامل ہیں جنہیں فوری طور پر اسپتال منتقل کردیا گیا۔ پولیس کے مطابق اچانک حملے کے بعد قانون نافذ کرنے والے ادارے کے اہلکاروں نے ہوٹل کو چاروں اطراف سے گھیرے میں لے لیا اور ہوٹل سے کئی افراد کو بحفاظت باہر نکال لیا گیا۔ دوسری جانب خبر ایجنسی کے مطابق پولیس کا کہنا ہےکہ آپریشن میں تمام حملہ آور ہلاک ہوگئے ہیں جب کہ دھماکوں کی ذمہ داری شدت پسند گروپ الشباب نے قبول کرلی ہے۔

واضح رہے کہ موغا دیشو میں جس ہوٹل پر حملہ کیا گیا وہ صومالیہ کے پارلیمںٹ کے قریب واقع ہے جس میں وہاں کے پارلیمینٹیرن سمیت بین الاقوامی شخصیات بھی موجود ہوتی ہیں۔

https://www.express.pk/story/719338/

غیر ملکی میڈیا کے مطابق صومالیہ کے صدارتی محل سے ایک کلو میٹر کی دوری پر واقع مشہور و معروف ’’دایاہ ‘‘ ہوٹل میں بارودی مواد سے بھری ایک گاڑی  اندر گھس گئی اور پھر وہاں فائرنگ شروع ہو گئی،جس کے کچھ لمحے بعد یکے بعد دیگرے ہونے والے دو بم  حملوں میں 28 معصوم و بے گناہ  افراد ہلاک اور51  زخمی ہو گے ہیں۔

 دہشت گردی اور بم دھماکے اسلام میں حرام ہیں اور قران و حدیث میں اس کی ممانعت ہے. جہاد وقتال فتنہ ختم کرنے کیلئے ہے ناکہ مسلمانوں میں فتنہ پیدا کرنے کیلئے۔الشباب کےدہشتگرد قرآن کی زبان میں مسلسل فساد فی الارض کے مرتکب ہو رہے ہی اور بے گناہ و معصوم لوگوں کے قتل کے مرتکب ہو رہے جس کی اسلام میں سختی سے ممانعت ہے۔دہشتگرد جان لیں کہ وہ اللہ کی مخلوق کا بے دردی سے قتل عام کر کے اللہ کے عذاب کو دعوت دے رہے ہیں اور اللہ اور اس کے پیارے رسول صلم کی ناراضگی کا سبب بن رہے ہیں. حدیث رسول اللہ میں ہے کہ انسانی جان کی حرمت خانہ کعبہ کی حرمت سے زیادہ بیان ہے۔ بے گناہ اور معصوم لوگوں کے قتل کی اسلام میں ممانعت ہےاور اسلام کسی بھی انسان کے ناحق قتل کو پوری انسانیت کا قتل قرار دیتا ہے۔

اسلام ایک امن پسند مذہب ہے جو کسی بربریت و بدامنی کی ہرگز اجازت نہیں دیتا۔ اسلام امن اور سلامتی کا دین ہے اور دہشتگرد اسلا م اور امن کے دشمن ہیں۔ دہشتگرد تنظیمیں جہالت اور گمراہی کےر استہ پر ہیں۔جہاد کے نام پر بے گناہوں کا خون بہانے والے دہشتگرد ہیں۔یہ دہشتگرد اسلام کو بدنام اور امت مسلمہ کو کمزور کر رہے ہیں۔الشباب خونی قاتل ،بھیڑئیے اور ٹھگ ہیں۔

Advertisements