لورا لائی میں دہشت گردوں کے حملے سے10اہلکار شہید ،سیکیورٹی فورسز کی جوابی کارروائی میں 4دہشت گرد مارے گئے


لورا لائی میں دہشت گردوں کے حملے سے10اہلکار شہید ،سیکیورٹی فورسز کی جوابی کارروائی میں 4دہشت گرد مارے گئے

لورالائی میں ڈی آئی جی آفس پردہشت گردوں کے حملے سے شہید ہونے والے اہلکاروں کی تعداد 10ہو گئی جبکہ 15اہلکار زخمی حالت میں ہسپتال میں زیر علاج ہیں ۔

تفصیل کے مطابق لورالائی میں ڈی آئی جی آفس میں کانسٹیبل کی اسامیوں کیلئے انٹرویو ہو رہے تھے کہ دہشتگردوں نے حملہ کردیا ،دہشتگردوں کی جانب سے پہلے ڈی آئی جی آفس پر فائرنگ کی گئی پھر دستی بم پھینکے گئے جس کے نتیجے میں بھگڈر مچ گئی ،فائرنگ اور دستی بم کے حملوں میں 10اہلکار شہید جبکہ 15زخمی ہو گئے۔حملے کے بعد سیکیورٹی فورسز کی جوابی فائرنگ میں4دہشتگرد مارے گئے ۔

دہشتگردوں کے حملے کی اطلاع ملتے ہی سیکیورٹی فورسز جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں اور علاقے کو گھیرے میں لے لیا، سکیورٹی فورسز کی جوابی کارروائی میں ایک حملہ آور مارا گیا،دہشتگردوں کے حملے پر ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی اور امدادی سر گرمیاں تاحال جاری ہیں ۔

بلوچستان کے ضلع لورا لائی میں ڈی آئی جی کے دفتر پر حملے کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے قبول کر لی ۔

https://dailypakistan.com.pk/29-Jan-2019/918374

طالبان کے دہشت گردانہ حملے اور بم دھماکے اسلام میں جائز نہیں یہ اقدام کفر ہے. اسلام ایک امن پسند مذہب ہے جو کسی بربریت و بدامنی کی ہرگز اجازت نہیں دیتا ۔طالبان کی دہشت گردی مسلمہ طور پر ایک لعنت و ناسور ہے۔ دہشت گرد نہ تو مسلمان ہیں اور نہ ہی انسان۔ دہشتگرد ملک اور قوم کی دشمنی میں اندہے ہو گئے ہیں. ان دہشت گردوں کا نام نہاد جہاد شریعت اسلامی کے تقاضوں کے منافی ہے۔

ظالبان جہاد نہ کر رہے ہیں بلکہ اپنے اقتدار کے لئے لڑ رہے ہیں۔
طالبان دہشت گرد فساد فی الارض کاارتکاب کر رہے ہیں ۔اسلامی ریاست کیخلاف مسلح جدوجہد حرام   ہے۔خودساختہ تاویلات کی بنیاد پر مسلم ریاست کے خلاف ہتھیار اٹھانا اسلامی شریعہ کے مطابق درست نہ ہے ۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.