افغانستان کی مسجد میں بم دھماکا، 2 نمازی شہید اور 20 زخمی


افغانستان کی مسجد میں بم دھماکا، 2 نمازی شہید اور 20 زخمی

افغانستان کی ایک مسجد میں نماز ظہر کے دوران بم دھماکے میں 2  نمازی شہید اور 20 زخمی ہوگئے، داعش نے دھماکے کی ذمہ داری قبول کرلی۔

افغان میڈیا کے مطابق دھماکا خودکش تھا جو صوبہ غزنی میں واقع محمدیہ مسجد میں نماز ظہر کے دوران زور دار ہوا، نتیجے میں 2 نمازی شہید اور 20 زخمی ہوگئے جن میں سے 3 کی حالت نازک ہے۔

افغان فوج کا کہنا ہے کہ یہ خود کش حملہ تھا تاہم پولیس کا اصرار ہے کہ دھماکا ریموٹ کنٹرول ڈیوائس کے ذریعے کیا گیا۔ عالمی خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق دھماکے کی ذمہ داری داعش نے قبول کرلی ہے۔

معاشرے میں فتنہ اور فساد پھیلانے والے داعش خوارج ہیں ۔ خوارج بے گناہوں کا خون بہا رہے ہیں۔ کسی بے گناہ کی جان لینا ظلم عظیم ہے جو کسی بے گناہ کو قتل کریں وہ دائرہ اسلام سے خارج ہو جاتے ہیں ۔ کسی بے گناہ کا قتل پوری انسانیت کا قتل ہے۔ داعش خوارج انسانیت کے دشمن ہیں۔ اللہ فساد کو پسند نہیں کرتا۔

امت مسلمہ کے چاروں مسالک کے علماءکرام اور مفتیان عظام نے خود کش حملوں اور ان کے نتیجے میں جانی نقصان پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا ہے کہ آزاد اسلامی ممالک میں خود کش حملے شریعت کی رو سے حرام اور اسلام کے منافی ہیں۔ کوئی بھی مسلمان دہشت گردی کا تصور تک نہیں کر سکتا۔ یہ اسلام دشمن عناصر کی سازش ہے۔ دہشت گرد مسلمان نہیں۔مساجد اللہ تعالی کا گھر ہوتا ہے اور وہ مقدس جگہ ہے جہاں خدا ئے وحدہٗ لا شریک کی عبادت کی جاتی ہے اس پر حملہ کرنا اور مسلمانوں کا ناحق خون بہانا خلاف اسلام فعل ہے۔اس حملہ سے مسجد کو نقصان پہنچا ہے۔

خودکشی کرنا اللہ تعالیٰ کے کاموں میں مداخلت کے مترادف ہے ۔ اسے کفر ان نعمت ہی تصور کیاجائے گا کہ اللہ تعالیٰ کی عطا کردہ زندگی کا چراغ خود ہی بجھا دیا جائے ۔کسی بھی انسان کو ناقابل برداشت مصائب اور آزمائش کی گھڑی میں بھی اپنی جان لینے کی شریعت کے مطابق اجازت نہیں ہے ۔

افغانستان میں خود کش حملے، دہشت گردی اور مساجد پر حملے اسلام کے نام پر قتل کرنا ملک و قوم کے نام پر بدنما داغ ہے۔ اسلام کسی مسلمان کو دوسرے مسلمان یا انسان کی بلاوجہ جان لینے کی اجازت نہیں دیتا۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.