گلگت: ضلع دیامر میں لڑکیوں کے اسکول میں کتابیں، فرنیچر ‘نظرآتش


گلگت: ضلع دیامیر میں لڑکیوں کے اسکول میں کتابیں،فرنیچر نظر آتش

گلگت بلتستان کے علاقے دیامر میں لڑکیوں کے سرکاری پرائمری اسکول میں پراسرار طور پر آگ لگ گئی، جس کے نتیجے میں فرنیچر، کتابیں اور دیگر سامان جل گیا۔اس بارے میں پولیس افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر ڈان نیوز کو بتایا کہ اگرچہ آگ کی نوعیت ابھی واضح نہیں لیکن بظاہر ایسا لگتا ہے کہ کچھ شرپسندوں نے اسکول میں فرنیچر اور کتابوں کو آگ لگائی۔

خیال رہے کہ ایک سال قبل ضلع دیامر میں شرپسندوں کی جانب سے ایک ہی رات میں 14 اسکولوں کو نذرآتش کردیا گیا تھا، ان اسکولوں میں زیادہ تر لڑکیوں کے تعلیمی ادارے تھے۔ادھر ایک مقامی صحافی کا کہنا تھا کہ جس اسکول میں اب آگ لگی جو ان 14 اسکولوں میں سے ایک تھا۔

پولیس حکام کا کہنا تھا کہ انہیں کسی شارٹ سرکٹ یا کسی دیگر حادثاتی وجہ سے آگ لگنے کے شواہد نہیں مل سکے، تاہم آگ لگنے کی وجوہات جاننے کے لیے ایک انکوائری کا آغاز کردیا ہے۔دوسری جانب مقامی اسکولز کمیٹی کے چیئرمین میراج کی جانب سے اس واقعے کے خلاف کیس کے اندراج کے لیے پولیس سے رابطہ کیا گیا، تاہم اب تک کوئی کیس درج نہیں کیا گیا۔

انہوں نے اپنی درخواست میں دعویٰ کیا کہ تعلیم دشمن عناصر وقفے وقفے سے اسکولوں کو نشانہ بنا رہے ہیں، لہٰذا ان کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے۔

طالبان کی سکول دشمنی کسی سے ڈھکی چھپی نہ ہے۔ قرآنی احکامات کی صریح اور کھلی خلاف ورزی کر کے بھی یہ نام نہاد طالبان اسلام اور شریعت کا ڈھول پیٹ رہے ہیں. اُن کی جہالت کا سب سے بڑا شاہکار بچوں کے سکولوں کا نذرِ آتش کرنا ہے۔ا ن طالبان کا سکولوں کی تباہی  اور سکول دشمنی کا رویہ بتاتا ہے کہ وہ طالبان نہیں جاہلان ہیں. سکول دشمنی سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ یہ لوگ اسلام اور پاکستان دونوں کے مخلص نہیں اور نہ ہی ان کوپاکستان کی ترقی میں دلچسپی ہے جس کو ہزاروں انجینئر ، ڈاکٹر اور دوسرے مذامیں کے ماہرین کی ضرورت ہے۔طالبان کو نہ ہی پاکستانی عوام میں دلچسپی ہے بلکہ یہ تو اسلام ،پاکستان اور عوام کے دشمن ہیں کیونکہ یہ ہمیں ترقی کرتے ہوئے دیکھ نہیں سکتے۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.