افغانستان میں ہسپتال اور انٹیلی جنس ایجنسی کے دفتر پر ٹرک بم حملے میں عورتوں اور بچوں سمیت 20 افراد ہلاک،85 زخمی


افغانستان میں ہسپتال اور انٹیلی جنس ایجنسی کے دفتر پر ٹرک بم حملے میں عورتوں اور بچوں سمیت 20 افراد ہلاک،85 زخمی

افغانستان کے صوبے زابل میں ایک ہسپتال اور انٹیلی جنس ایجنسی کے دفتر کے قریب ٹرک بم دھماکے میں عورتوں اور بچوں سمیت 20 افراد ہلاک اور 85 زخمی ہوگئے۔افغان میڈیا کے مطابق زابل کے مرکزی شہر قلات میں حساس ادارے این ڈی ایس کی عمارت
کے قریب بم دھماکا ہوا۔
خودکش حملہ آور نے بارود سے بھرا ٹرک دھماکے سے اڑادیا جس کے نتیجے میں

افراد ہلاک اور 85 زخمی ہوگئے۔
لاشوں اور زخمیوں کوہسپتال منتقل کردیا گیا جہاں متعدد زخمیوں کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے جس کی وجہ سے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔ حکام نے بتایا کہ دھماکا ایک ہسپتال کے قریب ہوا۔ حملہ آور حساس ادارے کے دفتر کو نشانہ بنانا چاہتا تھا لیکن وہاں پہنچنے میں ناکام رہا جس کے بعد اس نے ایک ہسپتال کے قریب دھماکا کردیا۔ ہلاک اور زخمیوں میں خواتین، بچے، طبی عملہ، مریض اور ان کے تیماردار شامل ہیں۔طالبان نے حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے انٹیلی جنس ایجنسی کو نشانہ بنایا ہے۔
طالبان کی دہشتگردی، خودکش حملے اور بم دہماکے اسلام میں جائز نہیں۔طالبان اپنے اقتدار کے حصول کے لئے جنگ میں مصروف ہیں، لہزا یہ جہاد نہ ہے بلکہ دہشتگردی ہے۔ خود کش حملے شریعت کی رو سے حرام اور اسلام کے منافی ہیں۔ ایک بے گناہ انسان کا خون پو ری انسانیت کا خون ہے۔ بیگناہ انسانیت کا ناحق قتل شریعت اسلامیہ میں حرام ہے۔ نہتے انسانوں کو سیاسی ایجنڈے کی تکمیل کے لیے قتل کرنا بدترین جرم ہے اور ناقابل معافی گناہ ہے.دنیا کا کوئی مذہب بشمول اسلام حالت جنگ میں بھی خواتین اور بچوں کو نشانہ بنانے اور قتل کرنے کی اجازت نہیں دیتا۔
”وہ ہم میں سے نہیں جو ہمارے چھوٹوپر شفقت نہ کرےـ”

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.