ٹیگ کے محفوظات: ،، سیکیورٹی فورسز کی قربانیوں کی بدولت ہی امن کی شمع روشن ہوئی ہے۔

ٹانک میں 2 دہشت گرد ہلاک، کرنل مجیب شہید


ڈیرہ اسماعیل خان کے شہر ٹانک میں دہشت گردی کی ایک بڑی کارروائی کے دوران فائرنگ کے تبادلے میں کرنل مجیب الرحمان شہید ہو گئے جب کہ دو دہشت گرد بھی مارے گئے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے ڈیرہ اسماعیل خان کے علاقے ٹانک میں خفیہ اطلاعات کی بنیاد پر دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر آپریشن کیا‘ گھراؤ میں آنے پر دہشت گردوں نے فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں کرنل مجیب الرحمان شہید ہو گئے۔

مارے جانے والےطالبان دہشت گردوں کے ٹھکانے سے بڑی تعداد میں اسلحہ و گولہ بارود اور مواصلاتی آلات برآمد ہوئے۔ وزیراعظم عمران خان نے ٹانک میں دہشت گردوں کے خلاف کامیاب کارروائی پر فورسز کو خراج تحسین پیش کیا،انھوں نے شہید کرنل مجیب الرحمان کو خراج عقیدت پیش کیا اور ان کے درجات کی بلندی کی دعا کی، ان کا کہنا تھا پوری قوم افواج پاکستان اور سیکیورٹی اداروں کی قربانیوں کی معترف ہے، سیکیورٹی فورسز کی بے مثال قربانیوں کے باعث دہشت گردی کا خاتمہ ہوا، سیکیورٹی فورسز کی قربانیوں کی بدولت ہی امن کی شمع روشن ہوئی ہے۔

دہشت گردی کی اس کارروائی میں ایک کرنل کی شہادت افسوسناک واقعہ ہے، یہ کارروائی اس امر کی مظہر ہے کہ دہشت گردوں کی ایک تعداد شہروں میں چھپی ہوئی اور اپنی مذموم کارروائیوں میں مصروف عمل ہے۔ فوج کی طرف سے بڑے پیمانے پر دہشت گردوں کے خلاف کارروائیوں کے مثبت نتائج سامنے آئے ہیں ۔

ایسے میں سیکیورٹی فورسز نے شمالی وزیرستان سمیت ملک بھر میں دہشت گردوں کے خلاف موثر کارروائیوں کا آغاز کیا اور ان کے مضبوط ٹھکانوں اور نیٹ ورک کو توڑا۔ سیکیورٹی فورسز کی ان کارروائیوں کے نتیجے میں دہشت گردوں کی ایک بڑی تعداد ماری گئی اور کچھ مختلف علاقوں میں چھپ گئی۔ اب یہ چھپے ہوئے دہشتگرد وقتاً فوقتاً اپنی کارروائیوں کے ذریعے مسائل پیدا کرنے کی کوشش کرتے رہتے ہیں۔

تحریک طالبان کی دہشتگردی اور بم دہماکے خلاف اسلام ہے۔طالبان جہادنہ کر رہے ہیں بلکہ اپنے اقتدار کی جنگ لڑ رہے ہیں۔ دہشتگردوں نےملک میں افراتفری اور امن و امان کی صورتحال پیدا کرنے کے لئے دہشتگردی شروع کی ہوئی ہے۔ اپنی بات منوانے اور دوسروں کے موقف کو غلط قرار دینے کے لیے اسلام نے ہتھیار اٹھانے کی بحائے دلیل، منطق، گفت و شنید اور پرامن جد و جہد کا راستہ کھلا رکھا ہے۔ جو لوگ اس اصول کی خلاف ورزی کرتے ہیں وہ بالعموم جہالت اور عصبیت کے ہاتھوں مجبور ہو کر بغاوت کے مرتکب ہوتے ہیں۔

سیکیورٹی فورسز دہشت گردی کے خاتمے کے لیے سرگرم تو ہیں ہی سول اداروں کو بھی امن قائم کرنے اور دہشت گردی کے خاتمے کے لیےکو ششوں کو مضبوط بنانا ہو گا۔تمام ادارے مربوط طور پر دہشت گردی کے خلاف مشترکہ لائحہ عمل تشکیل دیں۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ اب ان دہشت گردوں اور انکے سہولت کاروں کی باقیات کیخلاف بھی آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے جو دوسروں کے ایجنڈے پر عمل پیرا ہو کر اس ملک کی سلامتی کیلئے مسلسل خطرہ بنے ہوئے ہیں۔

کیا طالبان نے رسول اکرم کی یہ حدیث نہیں پڑہی، جس میں کہا گیا ہے کہ ”مسلمان وہ ہے جس کے ہاتھ اور زبان سے دوسرا مسلمان محفوظ رہے؟