ٹیگ کے محفوظات: ابوبکر البغدادی

پاکستان و افغانستان کے امن کو داعش سے خطرہ


پاکستان و افغانستان کے امن کو داعش سے خطرہ

پاکستان  و افغانستان میں داعش کا بڑھتا ہوا اثر و رسوخ علاقوں کے عوام کے لئے ایک لمحہ فکریہ ہے۔افغانستان میں داعش کا بڑھتا اثر علاقائی امن کے لئے خطرہ ہے۔داعش، مشرق وسطیٰ کو بربادی کے جہنم میں جھونک کر اور وہاں سے پسپا ہو کر ،اب جنوبی ایشیا اور افغانستان میں قدم جما رہی ہے۔افغانستاں میں یہ بیک وقت طالبان اور افغان و اتحادی فوجوں سے بر سر پیکار ہے۔مشرقی افغانستان میں داعش نے چار روز تک جاری رہنے والی گھمسان کی جنگ کے بعد طالبان کو پسپا کرتے ہوئے پاکستان سے ملحقہ اہم ترین سرحدی علاقے تورا بورا پر قبضہ کر لیا۔ داعش نے کابل کی شیعہ  مسجد زہرا پر خودکش حملہ کر کے 4 افراد کو ہلاک کر دیا۔

پاکستان و افغانستان کے امن کو داعش سے خطرہ پڑھنا جاری رکھیں

Advertisements

کیا ابوبکر البغدادی تمام مسلمانوں کا خلیفہ ہے ؟


pic_giant_071414_SM_Abu-Bakr-al-Baghdadi

کیا ابوبکر البغدادی تمام مسلمانوں کا خلیفہ ہے ؟

داعش کا سربراہ ابو بکر البغدادی خلیفہ نہیں ہے کیوں کہ اسلام کے مطابق خلیفہ وہ ہوتا ہے، جس کی حکمرانی دنیا کے تمام مسلمانوں پر ہو لیکن بغدادی کی حکمرانی صرف شام و عراق کے مخصوص لوگوں اور مخصوص علاقے پر ہے۔ شریعت نے اس عظیم منصب کے لیے اہلیت وصلاحیت کی وہ تمام شرائط کامل مرتبہ میں لازمی قرار دی ہیں جو اس مرکزی اور اہم ترین منصب کے لیے قدرتی طور پر ہونی چاہئیں۔

کیا ابوبکر البغدادی تمام مسلمانوں کا خلیفہ ہے ؟ پڑھنا جاری رکھیں

کالعدم تحریک طالبان شکست وریخت کا شکار


کالعدم تحریک طالبان شکست وریخت کا شکار

mullah fazlullah
حکیم اللہ محسود کی ہلاکت کے ساتھ ہی تحریک طالبان پاکستان میں اختلافات شدت اختیار کر گئے تھے۔ تاہم تنظیم کو اس وقت شدید دھچکا لگا جب محسود طالبان نے ٹی ٹی پی سے علیحدگی کا اعلان کر دیا۔ کالعدم ٹی ٹی پی کے مرکزی ترجمان مولانا اعظم طارق کا مزید کہنا تھا کہ طالبان کے نام پربھتہ خوری کی اجازت نہیں دے سکتے، موجودہ نظام کے تحت ڈاکہ زنی اور بھتہ خوری کی جا رہی ہے، ٹی ٹی پی کا نظام سازشی ٹولے کے ہاتھوں میں چلا گیا ہے، کالعدم تحریک طالبان پاکستان میں اتحاد کی کوششیں کیں، مگر سازشیں ناکام ہوگئیں۔انہوں نے کہا کہ ظالم کو ظلم سے روکنے کی ہر ممکن کوششیں کریں گے۔اعظم طارق نے مزید کہا کہ ہم نے کالعدم تحریک طالبان میں اصلاح واتحاد کی کوشش کیں، مگر اب یہ کارروائیاں مزید برداشت نہیں ہوسکتیں، ہم امیرخالد محسود کی قیادت میں نیا گروپ بنانے اور علیحدگی کا اعلان کرتے ہیں، مسلک،عقائد ونظریات کی پرچار سے دوسرے حلقوں کے طالبان بدظن ہوئے ہیں، موجودہ تحریک طالبان پاکستان باہر سے پیسے لے کر اجرتی قاتل بنی ہوئی ہے، ہم درس گاہوں اور خانقاہوں پر دھماکے پر یقین نہیں رکھتے ، عوام اور عام مقامات کو نشانہ بنانا نہیں چاہتے۔

کالعدم تحریک طالبان شکست وریخت کا شکار پڑھنا جاری رکھیں